اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی درخواست سننے سے متعلق اپنے دائرہ اختیار پر فیصلہ محفوظ کر لیا جو 10 اگست کو سنایا جائے گا۔ الیکشن کمیشن میں تحریک انصاف کے باغی رہنما اکبر ایس بابر نے عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کر رکھی ہے جب کہ عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے توہین عدالت کی درخواست سننے سے متعلق الیکشن کمیشن کے دائرہ اختیار کو چیلنج کیا  تھا۔

چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں آج 5 رکنی کمیشن نے درخواست پر سماعت کی جس میں عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے ایک بار پھر الیکشن کمیشن کا دائرہ اختیار چیلنج کیا۔ بابر اعوان کا اپنے دلائل میں کہنا تھا کہ آئین کے مطابق ہائیکورٹ اور سپریم کورٹ توہین عدالت کی کارروائی کر سکتے ہیں۔ توہین عدالت سے متعلق الیکشن کمیشن کے اختیارات کا کوئی ذکر نہیں۔ بابر اعوان نے اپنے دلائل میں کہا کہ 1976 کا توہین عدالت کا قانون ختم ہو چکا ہے اور توہین عدالت کی کارروائی کے لیے الیکشن کمیشن کا قانون موجود ہونا لازم ہے۔

انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 6 کے تحت غداری کا مقدمہ چلانے کا بھی الگ سے قانون اور طریقہ کار ہےاور آئینی اختیارات کے لیے قانون کا موجود ہونا بھی لازم ہے۔ بابر اعوان نے مؤقف اپنایا کہ عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پر کارروائی کا مطالبہ غیرقانونی ہے اگر الیکشن کمیشن کا درجہ ہائیکورٹ جتنا ہے تو پھر قواعد بھی ہائیکورٹس والے لاگو ہوں گے۔

الیکشن کمیشن پانچ میں سے کون سی عدالت کے قواعد پر چلے گا؟ آئین میں الیکشن کمیشن کو انتخابی عمل سے متعلق اختیارات دیئے گئے ہیں۔ عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے الیکشن کمیشن کے دائرہ اختیار پر اپنے دلائل مکمل کر لیے جس کے بعد چیف الیکشن کمشنر نے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے اسے 10 اگست کو سنانے کا اعلان کیا

Advertisements

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s