فاسٹ نیوز : سپریم کورٹ کے پاناما کیس عملدرآمد بینچ نے سیکیورٹی اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے چیئرمین ظفر حجازی کے خلاف ریکارڈ ٹیمپرنگ پر آج ہی مقدمہ درج کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔

جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے پاناما کیس عملدرآمد کیس کی سماعت کی۔ اس موقع پر اٹارنی جنرل اور چیئرمین ایس ای سی پی کے وکیل بھی عدالت میں پیش ہوئے۔

سماعت کے دوران جسٹس اعجاز افضل نے سوال کیا کہ ریکارڈ ٹیمپرنگ کا کیا بنا جس پر اٹارنی جنرل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کو ذمہ دار قرار دیا ہے۔

اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ ایف آئی اے نے ظفر حجازی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی بھی سفارش کی ہے۔

اس موقع پر چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کے وکیل نے عدالت کے روبرو اعتراف کیا کہ دستاویزات میں ٹیمپرنگ ہوئی ہے تاہم یہ ٹیمپرنگ دس ماہ پہلے کی گئی تھی۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ظفر حجازی نے ماتحت افسران پر دباؤ ڈالا اور دھمکیاں دیں جب کہ جسٹس شیخ عظمت سعید نے کہا کہ یہ بھی دیکھنا ہوگا کہ ظفر حجازی نے کس کے کہنے پر ٹیمپرنگ کی۔

خیال رہے کہ ایف آئی اے نے چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کو شریف خاندان کی چوہدری شوگر ملز کے ریکارڈ میں رد و بدل کا ذمہ دار قرار دیا تھا

Advertisements

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s