فاسٹ نیوز : وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ بھارت کے ساتھ کشمیر سمیت تمام مسائل کا حل چاہتے ہیں تاہم بدقسمتی سے بھارت نے مثبت جواب نہیں دیا۔

یہ بات انہوں نے تاجکستان کے صدر سے ملاقات کے بعد ایک پریس کانفرنس کے دوران کہی۔

وزیراعظم صدر امام علی رحمانوف کی دعوت پر بدھ کی صبح تاجکستان کے دو روزہ سرکاری دورہ پر روانہ ہو ئے، اعلیٰ سطح کا وفد بھی انکے ہمراہ ہے۔

نواز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان دوشنبے میں سفارتخانے میں جلد الگ کمرشل سیکشن آغاز کرے گا جس سے دوطرفہ تعلقات میں تیزی آئے گی۔

انہوں نے کہا کہ قریبی تعاون اوراعلیٰ سطح پر تبادلوں کے تسلسل سے تعلقات مزید مستحکم ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اور تاجکستان کے مشترکہ ورکنگ گروپ کا اجلاس اس ماہ کے آخرمیں ہورہا ہے جو تجارت،سرمایہ کاری اور ٹرانسپورٹ کے شعبوں میں مواقع تلاش کرے گا۔

اس موقع پر پاکستان اور تاجکستان کےدرمیان  دوطرفہ تعاون کے سمجھوتوں پر دستخط بھی ہوئے۔

دونوں ممالک کے درمیان قریبی اور تعاون پر مبنی تعلقات استوار ہیں جو مشترکہ تاریخ، ثقافت اور عقیدے سے عبارت ہیں۔

دونوں ممالک خطہ میں امن، استحکام اور ترقی کیلئے یکساں سوچ رکھتے ہیں جبکہ دونوں ممالک کا اہم علاقائی اور عالمی امور پر بھی ایک جیسا موقف ہے۔

پاکستان ان چند ممالک میں سے ایک ہے جنہوں نے تاجکستان کی آزادی کو تسلیم کرتے ہوئے سفارتی تعلقات استوار کئے اور دوشنبے میں اپنا ریذیڈنٹ مشن کھولا۔

تاجکستان ”کاسا 1000“ کے رکن ممالک افغانستان، کرغزستان، پاکستان اور تاجکستان کے چار جہتی سربراہ اجلاس کی میزبانی بھی کر رہا ہے۔

اس منصوبہ کا مقصد توانائی راہداری کا قیام اور تاجکستان، افغانستان اور پاکستان کے مابین زمینی روابط استوار کرنا ہے۔ یہ پاکستان اور افغانستان کو تاجکستان اور ازبکستان میں پیدا ہونے والی بجلی بھی فراہم کرے گا

Advertisements

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s