اسلام آباد( فاسٹ نیوز )  آئندہ مالی سال 2017-18کے لئے بجٹ کا حجم4ہزار778ارب روپے ہوگا جس میں سے ایک ہزار ایک اربروپے ترقیاتی بجٹ کے لئے رکھے گئے ہیںجبکہ ملکی و غیر ملکی قرضوں پر سود کی ادائیگی کے لئے 14سو ایک ارب روپے رکھے جانے کی تجویز ہے۔

سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کی 2 مختلف تجاویز زیرغور ہیں ۔پہلی تجویز میں10 فیصد اضافے کے ساتھ ایڈہاک ریلیف ضم کیا جائے گا جبکہ دوسری تجویز ایڈہاک ریلیف تنخواہ میں ضم کرنے کے بعد موجودہ تنخواہ میں10 فیصد اضافہ زیر غور ہے۔بجٹ تجاویز کی حتمی منظوری وفاقی کابینہ 26 مئی کے اجلاس میں دے گی،ایف بی آر کی ٹیکس وصولیوں میں 15 فیصد اضافے کا ہدف مقرر کرنے کی تجویز ہے جو تقریبا 39سو ارب روپے بنتا ہے۔ اس اس سلسلے میں حتمی فیصلہ ابھی ہونا باقی ہے۔

بجلی، زراعت اور دیگرشعبوں کے لئے سبسڈی اور گرانٹ کیلئے 230 ارب روپے مختص کرنے کی بھی تجویز ہے جبکہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے لئے 123 ارب روپے مختص کئے جانے کی تجویز ہے۔بے گھر افراد کی بحالی اور سیکیورٹی انتظامات کے لیے 90 ارب روپے مختص کئے جائیں گے۔ آئندہ مالیسال کے بجٹ میں شرح نمو اور افراط زر کا ہدف6 فیصد تجویز کیا جا رہا ہے جبکہ مالی خسارہ 4عشاریہ ایک فیصد اور کرنٹ اکاونٹ خسارہ جی ڈی پی کا 2 اعشاریہ 6 فی صد تجویز کیا جا رہا ہے

Advertisements

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s