فاسٹ نیوز : پاکستانی شہری سے پسند کی شادی کرنے والی بھارتی خاتون ڈاکٹر عظمیٰ نے الزام لگایا ہے کہ اسے ہراساں کیا گیا اور زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

ڈاکٹر عظمیٰ نے مقامی عدالت میں 506 ضابطہ فوجداری کی درخواست دائرکی ہے، جس میں موقف اپنایاہے کہ انہیں ہراساں کیا گیا اور اور زیادتی کا نشانہ بنایا گیا جبکہ ان سے امیگریشن دستاویزات بھی چھین لی گئی ہیں۔

ڈاکٹر عظمیٰ نے مجسٹریٹ کے سامنے بیان رکارڈ کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ان کی شادی گن پوائنٹ پرکروائی گئی، وہ پاکستان میں شادی کرنے نہیں آئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ وہ بھارتی ہائی کمیشن سے باہر نہیں جانا چاہتی، باحفاظت واپسی تک ہائی کمیشن میں ہی رہے گی، عدالت نے طاہر کے گھروالوں اور نکاح خواں کو طلب کرلیا ۔

عظمیٰ کے شوہر طاہرعلی کا کہنا ہے کہ وہ 2002 سے ملائیشیا میں مقیم تھا، 2016 ڈاکٹر عظمیٰ سے ملائیشیا میں ملاقات ہوئی اور رابطہ رشتے میں تبدیل ہوگیا۔

طاہر کے مطابق وہ 17 اپریل کو ملائیشیا سے پاکستان آیا جبکہ عظمیٰ یکم مئی کوپاکستان آئی اور 3 مئی کو ان کی شادی ہوئی، 5 مئی کو دونوں نے فیصلہ کیا کہ وہ بھارت جائیں گے۔

طاہر علی نے بتایا کہ عظمیٰ کے بھائی کا فون آیا تھا کہ پاکستان میں شادی ہوگئی،اب بھارت میں خوشی منائیں گے،جب ہم بھارتی سفارتخانے ویزے کا پتہ کرنے گئے تو انہوں نے عظمیٰ کو اندر بلالیا اور باہر نہیں آنے دیا گیا، طاہر نے اپیل کی کہ اس کی بیوی کو اس کے حوالےکیا جائے۔

دوسری جانب اس معاملے میں اس وقت ٹوئسٹ آ گیا جب بھارتی ہائی کمیشن اسلام آباد نے کہا کہ بھارتی خاتون عظمیٰ نے بھارتی ہائی کمیشن کو پناہ اوربھارت واپس جانے کی درخواست دی ہے۔

پاکستان کے دفتر خارجہ سے جاری بیان کے مطابق بھارتی شہری ڈاکٹرعظمیٰ کے معاملے پر بھارتی ہائی کمیشن نے رابطہ کیا اور بتایا کہ 20سال کی بھارتی شہری عظمیٰ نے طاہرعلی سے شادی کی لیکن پاکستان آکر پتہ چلا کہ طاہر پہلے سے شادی شدہ اور چار بچوں کا باپ ہے۔

طاہرعلی نے فاسٹ نیوز سے گفتگو میں کہا کہ عظمیٰ جانتی تھی کہ وہ پہلے سے شادی شدہ ہے لیکن اگر عظمیٰ اس کے ساتھ نہیں رہنا چاہتی تو یہ اس کا حق ہے۔

طاہر کے مطابق اس کی بیوی کا تعلق نئی دہلی سے ہے ،دونوں کی پہلی ملاقات ملائیشیا میں ہوئی، تھوڑے عرصے بعد دونوں نے شادی کا فیصلہ کیا، عظمیٰ یکم مئی کو واہگہ کے راستے پاکستان آئی اور 3 مئی کو دونوں نے بونیر میں شادی کی۔

شادی کے دو دن بعد وہ اپنی بیوی کے ساتھ بھارت کا ویزہ لگوانے اسلام آباد میں واقع بھارتی ہائی کمیشن گیاتھاجس کے بعد سے اس کا بیوی سے رابطہ نہیں ہوا۔

دریں اثناء بھارتی شہری عظمیٰ کی پُرکردہ پاکستانی ویزافارم کی کاپی فاسٹ  نیوز نے حاصل کرلی ۔

عظمیٰ نے پاکستان کے وزٹ ویزا کے حصول کیلئے فارم میں بونیر میں بیمارآنٹی کی تیمارداری کا حوالہ دیا۔

فارم میں درج معلومات کے مطابق طاہر علی کے والد نذیرالرحمان عظمیٰ کے اسپانسرہیں

Advertisements

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s