فاسٹ نیوز : سہون میں حضرت لعل شہباز قلندر کے مزار پر صوفی فکر سے سرشار جذبے آج بھی دکھائی دیتے ہیں جو ثابت کرتا ہے کہ محبت کے پیغام کو دہشت کے ذریعے مٹا یا نہیں جاسکتا۔

حضرت عثمان مروندی نےسہون کی سرزمین پر صوفی فکر سے امن و آشتی کے پیغام کی جو شمع جلائی، اسے بجھانا دہشت گردوں کی بس کی بات نہیں۔یہی سبب ہے کہ دہشت گردوں کے خلاف پہلی صف میں صوفی شعور غالب نظر آتا ہے کچھ ایسا ہی منظر پیلا لباس پہنے صوفی مرد و خواتین نے اپنی امن ریلی میں پیش کیا۔

’پرپل وومن ‘گروپ کی خاتون کا کہناہے کہ لوگوں میں اور زیادہ حوصلہ افزائی ہوئی ہے کے ہم مزاروں پہ جائیں اور منہ توڑ جواب دیں ۔جن لوگوں نے حملہ کیا ہے کہ اس سے کوئی خوف و ہراس نہیں آیا۔

’اٹھو رندو، پیو جام قلندر ‘کے صوفیانہ کلام کے ذریعے ’پرپل وومن گروپ‘ اور صوفیوں کے’ منڈلی ‘گروپ نے مشترکہ طور پر درگاہ کے صحن میں سوز و سازکی ایسی محفل برپا کی کہ سننے والے جھوم اٹھے۔

صوفی منڈلی گروپ کے ایک نمائندے کا کہناہے کہ دہشت گردوں کو امن کا پیغام دینا چاہتے ہیں۔

اولیاء اللہ کے چاہنے والے امن و سکون اور سلامتی کے درس کو یوں ہی پروان چڑھاتے رہتے ہیں جیسا کہ اس محفل سے عیاں تھا

Advertisements

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s